جوڑوں کے درد سے کیسے بچا جائے؟

جوڑوں کا درد بنیادی طور جسم میں طاقت کے اجزا کی کمی سے ہوتا ہے، اور خواتین اسکا خاص طور پر نشانہ بنتی ہیں۔اس مرض کو گٹھیا یا گنٹھیا کا درد بھی کہا جاتا ہے۔اس مرض میں جسم میں یورک ایسڈ کی مقدار بڑھنے کی وجہ سے جوڑوں کی رطوبت میں کمی آنے لگتی ہے۔جس سے ہڈیاں آپس میں رگڑ کھاتی ہیں اور اس سے ہڈیاں گھستی ہیں ،شدید درد ہوتا ہے اور جوڑوں میں سوجن پیدا ہوجاتی ہے۔جسم میں کیلشیئم اور وٹامن ڈی کی کمی بھی اس مرض کو خاصابڑھاوا دیتی ہے۔۔اور ہڈیوں پٹھوں کی نشونما رک جاتی ہے۔

 یہ مرض مردوں کی نسبت عورتوں میں زیادہ پایا جاتا ہے۔اس وجہ خواتین کے مختلف جسمانی افعال بھی ہوتے ہیں،اسی بنا پر بچیوں اور عورتوں کی خوراک پرہمیشہ خصوصی توجہ رہنی چاہیئے۔جوڑوں کے مرض سے بچنے کا سب سے اہم طریقہ تو یہ ہے کہ ایسے گھروں میں رہائش اختیار کی جائے جہاں دھوپ بھرپور آتی ہو۔اس طرح سے آپ کو قدرتی وٹامن ڈی ملتا رہے گا۔۔جن لوگوں کو آرتھرائٹس کا مرض لاحق ہوگیا ہے وہ گائے اور بکرے کے گوشت سے پرہیز کریں۔پالک اور چنے سے بھی اجتناب کریں۔ اگر آپ کو جوڑوں کا درد نہیں بھی ہے،تو بھی گائے اور بکرے کا گوشت کم کھانا چاہیئے۔اور ڈبے اور ریپر میں پیک چیزیں کھانے سے گریز کرنا چاہیئے۔۔۔جوڑوں کے درد میں کون سی غزائیں آپ کو فائدہ دے سکتی ہیں۔آئیےان کی بات کرتے ہیں۔

مریض کو دودھ اور انڈے اپنی خوراک میں روزانہ کی بنیاد پر شامل کرنا چاہیئیں،اس سے آپ کو کیلشیئم اور وٹامن ڈی ملتا رہے گا۔اسی طرح خشخش (poppy seeds) شوگر اور جوڑوں کے مرض میں  نہایت مفید ہے۔۔ایک چمچہ روز چبا کر کھالی جائے تو یہ جوڑوں کےدرد میں کمی لاتی ہے۔اسی طرح بھنڈی اور تورئی وہ سبزیاں ہیں جو خصوصی طور پر جوڑوں کو مضبوط بناتی ہیں۔ایک اور بہت خاص چیز ہے یعنی درختوں سے نکلنے والا گوند۔ یہ سنہرے کرسٹل جیسی نعمت جوڑوں کے مریضوں کیلئے قدرت کا تحفہ ہے۔اسے چاہے تو روز دو ٹائم،  ایک چوتھائی چمچہ چبا کر کھالیں یا پھر اس کا حلوہ وغیرہ بنا لیں۔ نہایت فائدہ مند ہے۔۔یہ حلوہ زچگی کے بعد خواتین کو بھی کھلایا جاتا ہے۔جس میں مکھانے وغیرہ بھی پڑتے ہیں۔اس ڈش کو عام طورپر گوند ہی کہا جاتا ہے۔

اسی طرح جوڑوں کے مرض میں خشک میوے بھی نہایت فائدہ دیتے ہیں،مونگ پھلی، اخروٹ ، بادام ، تِل، اور کاجو خوب کھلائے جائیں۔ساتھ ہی زیتون کا تیل سب سے شاندار ثابت ہوتا ہے،یہ تیل روزانہ ایک چمچہ صبح شام پینے سے درد میں کمی ہوتی ہے، بلکہ ہڈیوں کی رگڑ سے پیدا شدہ ورم کو بھی آرام ملتا ہے۔جبکہ اسی تیل کی مالش سے جوڑوں کے درد میں بھی کمی آتی ہے۔

جوڑوں کا درد اگر زیادہ پریشان کرنے لگے ادرک کا استعمال بڑھا دیں۔ساتھ ہی دودھ میں ہلدی ملا کر پینا شروع کردیں،انشاللہ بہت آرام ملے گا۔۔

جب بھی جسم کو کوئی تکلیف لاحق ہو تو اس کے بارے میں پڑھنا شروع کریں۔اس سے آپ کو اپنا خیال رکھنے میں مدد ملے گی۔ عام حکمیوں سے جتنا ممکن ہو دور رہیں کیونکہ ان کی ادویات میں تحقیق کا عنصر ناپید ہوتا ہے۔ہلکی پھلکی ورزش کو معمول بنا لیں۔۔اس سے جسم کے افعال چست رہتے ہیں اور مرض کی شدت کم محسوس ہوتی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

why arthritis attack ? why arthritis pain stat ? which food is good in arthritis? how can we care arthritis? home cure of arthritis? Arthritis is the swelling and tenderness of one or more joints. The main symptoms of arthritis are joint pain and stiffness, which typically worsen with age. Kehdopak.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں