اب فیڈریشن سنبھالنے والا کوئی نہیں رہا، ملک میں ایمرجنسی یا مارشل لاء لگ سکتا، پیر پگارا

عام انتخابات 2024 میں دھاندلی کے خلاف گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس، فنکشنل لیگ کے سربراہ پیر پگارا کی اپیل پر جامشورو ٹول پلازہ پر تاریخی دھرنا دیا گیا۔

مریدوں، کارکنان، ووٹرز، سپورٹرز کا سمندر اُمڈ آیا، ہرطرف پیر پگارا کی تصاویر، جی ڈے اے اور فنکشنل لیگ کے جھنڈے دکھائی دیئے۔

اس موقع پر انتخابی دھاندلی پر نگراں حکومت، چیف الیکشن کمشنر، الیکشن کمیشن کے صوبائی اراکین کے خلاف نعرے بازی کی جاتی رہی، شرکاء نے نماز جمعہ بھی دھرنے کے مقام پر ادا کی۔

شرکاء نے الیکشن نتائج مسترد کرتے ہوئے عوام کا مینڈیٹ چوری کرنے والوں پر آرٹیکل 6 لگانے کا مطالبہ کردیا۔

دھرنے سے خطاب میں گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس، فنکشنل لیگ کے سربراہ پیر پگارا صبغت راشدی نے کہا ہےکہ الیکشن کےبعد کو کچھڑی بنی، حکومت 10 ماہ بھی نہیں چل سکے گی، ہوسکتا ہے ایمرجنسی نافذ ہو یا مارشل لا لگ جائے۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن نتائج 3 ماہ قبل تیار ہوگئے تھے، اتنخابات میں حصہ اس لئے لیا تاکہ انہیں بے نقاب کریں، اب یہ ملکی و عالمی سطح پر بے نقاب ہوگئے ہیں۔

پیر پگارا نے کہا کہ ہمارا احتجاج الیکشن ریکارڈ اور بدترین دھاندلی کے خلاف ہے، فوج ہماری ہے، اس کے خلاف جانے کا سوچ بھی نہیں سکتے، فوج نہ ہوتو ملک کے حالات فلسطین کی طرح ہوجائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن نتائج کے بعد جیتنے والا پریشان اور ہارنے والا احتجاج کررہا۔

پیر پگارا کا کہنا تھا کہ عمران خان کو چور نہیں سمجھتا، اگر وہ چور ہیں تو پھر ہم سب بھی چور ہیں، اُس سے پہلے بھی وزرائے اعظم نے توشہ خانہ سے گاڑیاں لیں، ان سے کوئی نہیں پوچھ رہا۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے بچوں، نوجوانوں اور خواتین نے الیکشن میں کمال کیا، انصاف نہیں دو گے تو لوگ دوسرا راستہ نکالیں گے، فیصلہ سازوں کو کہتا ہوں سوچیں اب فیڈریشن سنبھالنے والو کوئی نہیں رہا۔

ان کا کہنا تھا کہ 16 ماہ کے دوران ان کی حکومت میں جو مہنگائی ہوئی، اس سے متوسط طبقہ ختم ہوگیا، حالات اچھے نہیں، ملک کو امیر نہیں، غریب چلاتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں