تنخواہ دار طبقے پر ٹیکس، حکمرانوں نے ظلم کی انتہا کردی، حافظ نعیم الرحمان

امیر جماعت اسلامی پاکستان حافظ نعیم الرحمان نے استفسار کیا کہ ہم کب تک آئی ایم ایف کے غلام رہیں گے؟

بونیر کے علاقے سواڑی کے کالج گراونڈ میں جلسے سے خطاب میں حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ تنخواہ دار طبقہ پر ٹیکس لگاکر حکمرانوں نے ظلم کی انتہا کردی۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں لوڈشیڈنگ اور مہنگائی کی وجہ سے عوام شدید پریشان ہیں، جمہوریت نہیں مارشل لا نافذ ہے۔

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ شہباز حکومت ناکام ہوچکی، 12 جولائی کو اسلام آباد میں بھرپور دھرنا ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ پختونخواہ میں بدامنی ہے، عوام خوف کا شکار ہیں، بھارت پاکستان اور کشمیر میں دہشت گردی کررہا، مودی سرکار نے مسلمانوں پر زندگی تنگ کردی۔

حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ وڈیروں اور جاگیرداروں نے عوام کو غلام بنا رکھا، مرکزی حکومت نے ظالمانہ بجٹ پاس کرکے عوام کی زندگی اجیرن کردی۔

انہوں نے کہا کہ ملکی بجٹ کی 52 فیصد رقم قرضوں کے سود کی مد میں ادا کی جاتی، ہمیں آزاد ملک چاہے۔

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ ہم حکومت کو مجبور کرکے امریکی غلامی سے نجات دلائیں گے، یاد رکھیں قومیں نظریات سے بنتی ہے کلچر سے نہیں، جماعت اسلامی ملک میں یکساں نظام کو لائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ صوبے میں یکساں نظام تعلیم کی ضرورت ہے، بیرسٹر گوہر بتائیں صوبے میں یکساں نظام تعلیم کیوں نہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں