ورلڈکپ: بھارت نے آسٹریلیا 6 وکٹ سے شکست دیدی

ورلڈکپ کے پانچویں اور اپنے پہلے میچ میں بھارت نے آسٹریلیا کو 6 وکٹ سے شکست دے دی۔چنئی میں کھیلے گئے میچ میں آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور 49 اعشاریہ 3 اوورز میں 199 رنز پر آل آؤٹ ہوگئی۔

متنازع کرکٹ فین کے میدان میں گھس جانے پر ورلڈ کپ سیکیورٹی پر سوال اٹھ گیا،200 رنز کے آسان ہدف کے تعاقب میں کپتان روہت شرما سمیت بھارت کے ابتدائی 3 کھلاڑی صرف 2 رنز پر پویلین لوٹ گئے، کینگروز بولرز نے ان تینوں ہی کھلاڑیوں صفر پر آؤٹ کردیا۔

ایسا میں لگا کہ آگے بھی آسٹریلیا میچ پر اپنی گرفت مضبوط کرنے میں کامیاب رہے گا لیکن ویرات کوہلی اور کے ایل راہول نے چوتھی وکٹ پر 165 رنز کی شراکت قائم کی اور بھارت کی یقینی فتح کی راہ ہموار کردی۔

ویرات کوہلی 85 رنزکی اننگز کھیل کر 167 رنز پر پویلین لوٹ گئے، انہوں نے اس ذمے دارانہ اننگز کے دوران 6 چوکے لگائے۔
ورلڈ کپ میں سلو اوور ریٹ، سری لنکن ٹیم پر جرمانہ عائد

جس کے بعد باقی رنز کے ایل راہول اور ہاردک پانڈیا نے مکمل کرلیے، کے ایل راہول 97 جبکہ ہاردک پانڈیا 11 رنز پر ناقابل شکست رہے۔
آسٹریلیا کے ہیزل ووڈ نے 3 جبکہ مچل اسٹارک نے 1 وکٹ اپنے نام کی۔

اس سے قبل ایونٹ کے بڑے میچ میں آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا، بھارتی بولرز نے 50 اوورز کے دوران مہمان ٹیم کی ایک نہ چلنے دی۔رویندرا جدیجا، کلدیپ یادیو اور جسپریت بہمرا نے آسٹریلوی بیٹرز کو 49 اعشاریہ 3 اوورز میں 199 رنز پر پویلین بھیج دیا۔

آسٹریلیا کی طرف سے اسٹیو اسمتھ 46، ڈیوڈ وارنر 41، مچل اسٹارک 28 اور مارنوس لیبوشین 27 کے علاوہ کوئی بیٹر خاطر خواہ پرفارمنس نہ دکھا سکا۔

میچ میں آسٹریلوی ٹیم کی قیادت پیٹ کمنز اور بھارتی ٹیم کی قیادت روہت شرما کر رہے ہیں، بھارتی کپتان نے آسٹریلیا کے خلاف 6 بولز سے گیند کروائی اور تمام ہی وکٹ لینے میں کامیاب رہے۔رویندرا جدیجا 3، کلدیپ یادیو اور جسپریت بہمرا نے 2، 2 وکٹ حاصل کی جبکہ محمد سراج، ایشون اور ہاردیک پانڈیا نے 1-1 وکٹ حاصل کی۔

اس سے قبل ٹاس کے بعد گفتگو کرتے ہوئے روہت شرما نے کہا کہ یہاں کی کنڈیشنز بولرز کے لیے سازگار لگ رہی ہیں، شُبمن گِل کی طبیعت میں بہتری نہیں آئی اس لیے ایشان کشن کو ٹیم میں شامل کیا ہے۔

اس موقع پر پیٹ کمنز نے کہا کہ ہماری ٹیم متوازن ہے، ہم تازہ دم اور اچھی پوزیشن میں ہیں، میچ سے قبل کھلاڑیوں کو تیاریوں کے لیے کافی وقت ملا ہے۔واضح رہے کہ دونوں ٹیموں کا یہ اس ورلڈ کپ میں پہلا میچ ہے جبکہ باقی ٹیمیں ایک ایک میچ کھیل چکی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں