سپریم کورٹ بھی لندن ایگریمنٹ کے تحت چل رہی، عمران خان

بانی پی ٹی آئی، سانق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہےکہ انہیں ڈونلڈ لو اور جنرل باجوہ کو ایکسپوز کرنے کی سزا دی جارہی، سب کچھ لندن پلان کے تحت ہورہا، بلاول کے ساتھ انتخابی اتحاد نہیں ہوسکتا۔

اسلام آباد میں میڈیا سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس سے کہنا چاہتا ہوں قرآن کے پانچویں پارے کی 8 ویں آیت پڑھ لیں، قران میں ہےکہ دشمنوں سے بھی اتنی نفرت نہ کرو کہ انصاف نہ کرسکو، بلے کے کیس کی سماعت کیلئے 5 رکنی بینچ ہونا چاہیے تھا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ میرا جیل میں ہونا، پی ٹی آئی کا خاتمہ اور نواز شریف کے کیسز معاف ہونا لندن پلان کا حصہ ہے، سب کچھ یہ بتانے کیلئے ہو رہا ہےکہ وہ قانون سے بالاتر ہیں۔

بانی پی ٹی آئی نے کہا کہ سپریم کورٹ بھی لندن ایگریمنٹ کے تحت چل رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے جانبدار امپائرز کے بغیر کبھی میچ نہیں کھیلا، ابھی بھی دو امپائر کھڑے کئے ہوئے ہیں، جن میں سے ایک امپائر نے نو بال دیدی ہے۔

بانی پی ٹی آئی نے کہا کہ توشہ خانہ ریکارڈ پر ہےکہ نواز شریف نے 6 لاکھ میں مرسیڈیز گاڑی اور مریم نواز نے بی ایم ڈبلیو گاڑی لی، ان کے سارے کیسز بند ہیں، ہمارا ایک کیس ختم ہوتا ہے تو دوسرا شروع ہوجاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ واحد آدمی ہوں جس نے 27 سال جدوجہد کرکے پارٹی کو اس جگہ پہنچایا، ان کو عوام کے غصے کا اندازہ نہیں، سوشل میڈیا کے دور میں کوئی چیز چھپ نہیں سکتی، انہیں لوگوں کا غصہ 8 فروری کو نظر آئے گا اور لوٹوں کی حالت بھی 8 فروری کو نظر آئے گی۔

عمران خان نے کہا کہ پیش گوئی کررہا ہوں ان کو دھچکا لگنے والا ہے، پی ٹی آئی کے امیدواروں کو انتخابی مہم چلانے نہیں دی جارہی۔

بانی پی ٹی آئی نے کہا کہ پارٹی اس وجہ سے کرش نہیں ہوئی کیونکہ عوام ساتھ کھڑے ہیں، پی ٹی آئی کے 850 ٹکٹ تھے مگر مشاورت کیلئے رجسٹر بھی جیل میں نہیں آنے دیا گیا۔

Founder PTI-EX-Prime Minister

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں