دواوں کی قیمتیں نہ بڑھائی تو کمپنیاں بند ہوجائیں گی ،وزیرصحت سندھ

کراچی :سندھ اسمبلی میں جان بچانے والی ادویات کی قیمتوں میں اضافے پر تحریک التوا پیش کر دی گئی۔وزیرِ صحت سندھ عذرا پیچوہو نے ایوان میں بتایا کہ بین الاقوامی کمپنیوں کا کہنا ہے کہ وہ کم قیمت پر دوائیں نہیں دے سکتے۔انہوں نے بتایا ہے کہ سندھ حکومت مفت ادویات سرکاری اسپتالوں میں فراہم کر رہی ہے اگر دواوں کی قیمتیں نہ بڑھائیں تو یہ کمپنیاں بند ہو جائیں گی۔

علاوہ ازیں سندھ اسمبلی میں پراپرٹی ٹیکس ترمیمی بل کثرت رائے سے منظور ہو گیا۔پراپرٹی ٹیکس کا ترمیمی بل وزیر داخلہ سندھ ضیا لنجار نے ایوان میں پیش کیا۔اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر علی خورشیدی نے کہا کہ شجرکاری مہم میں کون سے درخت لگائے جاتے ہیں۔ضیا لنجار نے کہا کہ شجرکاری مہم میں ببول کے درخت زیادہ لگائے جاتے ہیں، شجر کاری کے لیے کوئی ایریا پالیسی نہیں۔

علی خورشیدی نے کہا کہ سندھ میں سڑکوں کے اطراف شجرکاری زیرو ہے، سندھ کو گوگل میپ میں دیکھتے ہیں تو ہریالی کم نظر آتی ہے، محکمہ جنگلات نے سندھ کو ہرا بھرا کرنے کے لیے کیا اقدامات کیے ہیں۔ضیا لنجار نے کہا کہ تین بار گنیز ورلڈ ریکارڈ میں سندھ کے محکمہ جنگلات کا نام آیا، کراچی میں 1.2 ملین شجرکاری 23-2022 میں ہوئی ہے۔

رکن اسمبلی ایم کیو ایم فوزیہ حمید نے کہا کہ امتحانات کے دوران لوڈشیڈنگ بڑا مسئلہ ہے۔ناصر حسین شاہ نے کہا کہ ورلڈ بینک کے تحت 100 اسکولوں کو سولرائز کیا جا رہا ہے، کراچی میں چند بڑے تعلیمی اداروں کو سولرائز کیا جارہا ہے، کے الیکٹرک افسران سے ملاقات میں تمام جماعتوں کی نمائندگی رکھی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں