غزہ جنگ تباہ کُن، 6 ماہ میں 33 ہزار سے زائد فلسطینی شہید، 1260 اسرائیلی فوجی جہنم واصل

غزہ پر اسرائیل کی ریاستی دہشتگردی، بربریت، وحشت کو 6 ماہ مکمل ہوگئے، اسرائیلی فضائیہ اور آرمی کے حملوں میں اب تک 33 ہزار سے زائد فلسطینی شہید ہوچکے۔

21 ویں صدی کی سب سے تباہ کن جنگ میں شہید فلسطینیوں میں 13 ہزار سے زائد بچے شامل ہیں۔

اسرائیلی حملوں میں غزہ کی 70 فیصد آبادی بے گھر، 56 فیصد عمارتیں تباہ اور 227 مساجد کو بھی شہید کیا گیا۔

عرب میڈیا کے مطابق 11 لاکھ فلسطینیوں کو خوراک کے عدم تحفظ کا سامنا ہے، 2 سال سے کم عمر 31 فیصد بچے شدید غذائی قلت کا شکار ہیں۔

ادھر غزہ میں حماس کے مجاہدین کی کارروائی میں 14 اسرائیلی کمانڈوز جہنم واصل اور متعدد زخمی ہوگئے۔

حماس نے دعویٰ کیا ہےکہ خان یونس میں اسرائیلی فوجی سرنگ میں آپریشن کیلئے پہنچے تھے، جہاں حماس کے گھات لگائے جانبازوں نے اسرائیلی ٹینک کو نشانہ بنایا، جہنم واصل ہونے والوں میں اسرائیلی فوج کے کمانڈو کیپٹن آئیڈو، سارجنٹ امیتی ایون شوشن، سارجنٹ ریف ہاروش اور سارجنٹ الائی شامل ہیں۔

27 اکتوبر 2023 سے اب تک حماس کے حملوں میں 1260 اسرائیلی فوجی جہنم واصل ہوچکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں