نگرپارکر: پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں ہرن کا غیر قانونی شکار

محکمہ جنگلی حیات سندھ معصوم پرندوں اور جانوروں کا غیر قانونی شکار روکنے میں ناکام ہوگیا، تفصیل نیوز نے تھرپارکر میں پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں نایاب ہرن کو ذبح کرنے کی تصویر حاصل کرلی۔

نایاب ہرن کے شکار کیلئے تھرپارکر کو شکاریوں کا گڑھ کہا جاتا ہے، ماضی میں بھی کئی معصوم ہرن درندہ صفت شکاریوں کا نشانہ بن چکے، مٹھی میں ایک بار پھر ہرن غیرقانونی شکاریوں کا نشانہ بن گیا۔

ذرائع کے مطابق سندھ پولیس کے اہلکاروں نے سومار دل سکنہ جگلیو میں 16 اور 17 نومبر کی درمیانی شب نایاب ہرن کا شکار کیا، تصویر میں پولیس اہلکار شکر دین ڈھون کو اپنی نگرانی میں ہرن کو ذبح کرواتے دیکھا جاسکتا ہے۔

ذرائع کے مطابق پولیس اہلکار نے جرم کی پردہ پوشی اور ایکشن سے بچنے کیلئے ہرن ذبح کرنے کیلئے مٹھی سٹی میں واقع ایس ایس پی تھرپارکر کی رہائش گاہ کو استعمال کیا، ایس ایس پی کی غیر موجودگی میں غیر قانونی کام انجام دیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں