سول اسپتال کراچی میں کینسرکی کروڑوں روپے کی ادویات چوری

کراچی:سول اسپتال کراچی سے 36 کروڑ مالیت کی کینسر کی ادویات چوری ہوگئیں، 2 ملازمین کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔میڈیکل سپرنٹنڈنٹ سید خالد کی مدعیت میں عیدگاہ تھانے میں مقدمہ درج کروایا گیا، مقدمہ نمبر 160/24 20 جون کو درج کرایا گیا تھا، جس میں انکشاف کیا گیا کہ ملازمین نے ملی بھگت سے کینسر کے علاج کی 76 ہزار گولیاں غیر قانونی طور پر فروخت کردیں، جن کی مالیت 36 کروڑ روپے ہے۔

ایم ایس سول اسپتال سید خالد کے مطابق ادویات کی چوری میںمحکمہ صحت کے ملازم نیاز خاصخیلی اور اقبال احمد چنا سمیت دیگر عملہ ملوث ہے، 17 فروری 2023 سے 29 ستمبر 2023 کے دوران کینسر کے علاج میں استعمال ہونے والی ایلبونکس 50 ایم جی اور پالبونکس 125 ایم جی کی 76 ہزار گولیاں چوری کی گئیں۔ ادھر پولیس نے دونوں ملازمین کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارے تاہم گرفتاری ممکن نہیں ہوسکی

۔ 14 جون 2024 کو محکمہ صحت کی جانب سے دونوں ملازمین کے خلاف تحقیقات بھی کی گئی، ایم ایس سول اسپتال کو خط بھی لکھا گیا، جس میں بتایا گیا کہ 16 گریڈ کے نیاز احمد خاصخیلی جو ڈسپنسر اور سول اسپتال کے کنٹرول روم ایوننگ شفٹ کے انچارج ہیں، اقبال چنا جو 16 گریڈ کے اسٹاف نرس ہیں، دونوں ملازمین کینسر کی 36 کروڑ روپے مالیت کی دواو¿ں کی چوری میں ملوث ہیں، محکمہ صحت14 جون کو دونوں کو عہدوں سے بھی ہٹادیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں