خاتون مرغیوں کے خلاف شکایت لیکر عدالت جا پہنچی

کراچی میں خاتون مرغیوں کے خلاف شکایت لیکر عدالت پہنچ گئی۔

سندھ ہائیکورٹ نے گھروں میں مرغیاں پالنے کے خلاف درخواست پر کنٹونمنٹ بورڈ سمیت متعلقہ اداروں سے جواب طلب کرلیا۔

چیف جسٹس عقیل عباسی نے استفسار کیا کہ کیا متعلقہ اداروں کو شکایت کی گئی؟۔ خاتون درخواست گزار سمیرا نے کہا کہ کنٹونمنٹ بورڈ کچھ نہیں کررہا، ان کے اپنے قوانین میں اس کی اجازت نہیں۔

درخواست گزار کا کہنا تھا کہ مرغیوں کو گھر میں رکھنے سے پورے علاقے میں شور رہتا ہے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ویسے بھی مرغے تو بہت شرارتی ہوتے ہیں، شور بھی بہت کرتے ہیں۔

عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کیا کریں جس گھر میں مرغے مرغیاں پالے ہوئے ہیں، انہیں کاٹ دیں؟ پہلے زمانے میں تو شرارتی لڑکے مرغے کاٹ کر کھا جایا کرتے تھے۔

عدالت نے درخواست کی مزید سماعت 23 اپریل تک ملتوی کردی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں