کراچی: کروڑوں کی ڈکیتی، زیر تربیت DSP عمیر طارق بجاری ملوث

آئی جی سندھ اور کراچی پولیس چیف اورنگی میں گھر میں ڈکیتی کی واردات میں مبینہ ملوث انڈر ٹریننگ پولیس افسر و اہلکاروں کے آگے بے بس ہوگئے۔

ڈکیتی میں مبینہ ملوث پولیس افسر و اہلکاروں کے خلاف تاحال کارروائی نہ ہوسکی۔

آئی جی سندھ نے ایک مرتبہ پھر ڈکیتی کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی ویسٹ کو انکوائری افسر مقرر کرتے ہوئے 24 گھنٹوں میں واقعے کی غیر جانبدارانہ تحقیقات پر مبنی رپورٹ طلب کرلی۔

ذرائع کے مطابق آئی جی سندھ کے نوٹس کے باوجود کراچی پولیس چیف ملوث پولیس افسرا و اہلکاروں کے خلاف کوئی ایکشن نہ لے سکے، ابتدائی تحقیقات میں ڈسٹرکٹ ساؤتھ پولیس پارٹی کو شناخت کیا گیا تھا۔

گھر میں واردات میں ڈسٹرکٹ ساؤتھ کے انڈر ٹریننگ ڈی ایس پی عمیر طارق بجاری کے ملوث ہونے کے شواہد ملے تھے، واردات میں پولیس موبائل اور ڈبل کیبن گاڑی انڈر ٹریننگ ڈی ایس پی کے اسکواڈ کی ہیں۔

فرار ہوتے ہوئے پولیس موبائل اوردیگر گاڑیوں کی سی سی ٹی وی فوٹیجز سے پولیس کو مدد ملی تھی، انڈر ٹریننگ ڈی ایس پی کی اسپیشل پارٹی ماضی میں بھی ڈیفنس میں غیر قانونی چھاپوں میں ملوث رہی ہے۔

ذرائع کے مطابق متاثرہ شہری پر ایف آئی آر درج نہ کرانے پرشدید دباؤ ڈالا گیا، متاثرہ شہری اپنی درخواست واپس لینے پر آمادہ ہوگیا۔

پولیس ذرائع کے مطابق مدعی لوئی گئی رقم، طلائی زیورات اورموبائل فونزسمیت واپس ملنے پر مقدمہ درج نہیں کرانا چاہتا لیکن اب تک درخواست واپس نہیں لی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں