پی ٹی آئی سے وابستہ آزاد امیدواروں نے دوسری جماعتوں سے زیادہ ووٹ لئے،آئی ایم ایف

عالمی مالیاتی ادارے نے پاکستان میں انتخابات کے باوجود برقرار سیاسی بے یقینی کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میں سیاسی بے یقینی کی صورتحال برقرار ہے۔آئی ایم ایف کے مطابق پی ٹی آئی سے وابستہ آزاد امیدواروں نے 8 فروری 2024 کے انتخابات میں دیگر جماعتوں کے امیدواروںسے زیادہ ووٹ لیے۔آئی ایم ایف دستاویزات میں ذکر ہے کہ انتخابات کے بعد دو بڑی جماعتوں مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی نے مخلوط حکومت بنائی مگر پی ٹی آئی سے وابستہ آزاد امیدواروں نے دیگر سیاسی جماعتوں سے زیادہ ووٹ لیے، پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ ارکان نے قومی اسمبلی میں بڑی اپوزیشن قائم کی ہے۔

آئی ایم ایف کی سامنے آنے والی دستاویزات میں بتایا گیا ہے کہ نئی حکومت نے اسٹینڈ بائی ارینجمنٹ کی پالیسیاں جاری رکھنے کا عزم ظاہرکیا ہے، معاشی پالیسیوں کے عدم نفاذ، کم بیرونی فنانسنگ کے باعث قرضوں اورایکسچینج ریٹ پردباو¿ کا خدشہ ہے۔آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ بیرونی فنانسنگ میں تاخیر کی صورت میں بینکوں پرحکومت کو قرض دینے کا دباو¿ بڑھے گااور بینکوں پرحکومت کو قرض دینے کے دباو¿ سے نجی شعبے کیلئے فنانسنگ کی گنجائش مزید کم ہونےکاخدشہ ہے۔دستاویزات میں بتایا گیا کہ پیچیدہ سیاسی صورتحال، مہنگائی اور سماجی تناو¿،پالیسی اصلاحات کا نفاذ متاثرکرسکتا ہے جب کہ اشیاءکی قیمتیں، شپنگ میں رکاوٹیں یاسخت عالمی مالیاتی حالات بیرونی استحکام کو متاثرکریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں