وفاقی اور پنجاب حکومت فارم 47 کی دیمک زدہ بیساکھی پر کھڑی ہے،عمرایوب

قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر عمر ایوب نے کہا ہے کہ جو بھی آئین کو معطل یا ختم کرے وہ سنگین غداری کا مرتکب ہوتا ہے۔قومی اسمبلی کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے رہنما اور اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ پاکستان میں اس وقت صحیح جمہوریت کا فقدان ہے، اظہاررائے کی آزادی بہت کم ہے، سوشل میڈیا ایپ ایکس کو بند کیا گیا، میڈیا پر دباو¿ ہے۔عمر ایوب نے کہاکہ 9 مئی کے حوالے سے آزاد جوڈیشل کمیشن ہونا چاہیے جسے تمام سی سی ٹی وی ویڈیوز تک رسائی ہو، سچ سامنے آنا چاہیے۔

عمر ایوب خان نے کہا کہ عدلیہ کھڑی ہوگئی ہے، ان ججوں کو سلام پیش کرتے ہیں۔ بانی پی ٹی آئی خوددار اور بہادر شخص ہیں، وہ خوف کے بت توڑنے کی بات کرتے ہیں، ہم یہاں خوف کے بت توڑ کر آئے ہیں، آگ کا دریا عبور کرکے آئے ہیں۔اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ جمہوریت اور قانون کی بالادستی کے لیے آخری دم تک کھڑے رہیں گے، پنجاب اور وفاقی حکومت فارم 47 کی دیمک زدہ بیساکھی پر کھڑی ہے، لندن پلان عدم اعتماد سے شروع ہوا اور آج تک یہ کہانی چل رہی ہے اس کا ذمہ دار کون ہے؟۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ 9 مئی اور اوجڑی کیمپ پر جوڈیشل کمیشن بننا چاہیے، آرمی پبلک اسکول کی انکوائری رپورٹ بھی سامنے آنی چاہیے، حمود الرحمان کمیشن اور ایبٹ آباد کمیشن کی رپورٹس بھی سامنے آنی چاہیے۔عمر ایوب نے کہا کہ جب بینظیربھٹو کوشہیدکیا گیا اس وقت پورے ملک میں تشدد ہوا، تشدد کے واقعات سے نقصان کی رقم 2 ارب ڈالر بنتی ہے،کراچی میں ایک ارب ڈالر کا نقصان ہوا، پوچھناچاہتا ہوں کہ کیا اس وقت کوئی گرفتاری ہوئی؟۔اپوزیشن لیڈرنے کہا کہ کورکمانڈرہاو¿س اوردیگر تنصیبات کی سی سی ٹی وی ویڈیو سامنے آنی چاہیے، 18مارچ 2023 کی جوڈیشل کمپلیکس کی سی سی ٹی وی ویڈیو بھی غائب ہے، یہ سارے ثبوت کون اٹھا کر لے جا رہا ہے، یہ تو جرم ہے۔عمر ایوب نے کہا کہ 11 مارچ 1971 کو جنرل یحییٰ، شیخ مجیب سے جا کر ملے، شیخ مجیب الرحمان کے خلاف ملٹری آپریشن شروع کیا گیا، اس کے بعد ایک تاریخ ہے جس میں ملک دولخت ہوا، وہ فیصلہ یحییٰ خان کا فیصلہ تھا پورے ادارے کا نہیں۔

عمر ایوب نے اپنی تقریر میں کہا کہ مولانا فضل الرحمان نے بھی لندن پلان کا اعتراف کیا ہے، تیزی سے بڑھتی معیشت لندن پلان کی وجہ سے تتربتر ہوگئی۔ بلوچستان اور کشمیر میں آگ لگی ہوئی ہے، بلوچستان میں 20، 30 ہزار لوگوں کا روز افغانستان آنا جانا ہے، نگران حکومت نے چمن سرحد پر پاسپورٹ کی پابندی لگائی۔ محسن نقوی کوبلایا جائے جو نفرت کے بیچ بوئے گئے اس کی فصل ہم آج کاٹ رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں